ٹرمپ کا دورہ بھارت :پہلے ہی خطاب میں پاکستان کی تعریف


لاہور( ویب ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ دو روزہ دورے پر بھارت پہنچے تو بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے ان کا استقبال گرم جوشی سے گلے لگا کر کیا ۔ ڈونلڈ ٹرمپ کے ہمراہ امریکی خاتون اول میلانیا ٹرمپ، بیٹی اور صدارتی مشیر ایوانکا ٹرمپ اور داماد جیرڈ کشنر بھی ہیں۔یہ دورہ کئی حوالوں سے اہم قرار دیا جا رہا ہے، مسئلہ کشمیر اور بھارت کے ساتھ 3 ارب ڈالر کے دفاعی معاہدے امریکی صدر کے دورہ کےترجیحی نکات ہیں۔ٹرمپ کی بھارت آمد پر مودی سرکار نے کثیر رقم خرچ کی ،امریکی صدر اور ان کی فیملی کو تاج محل کی سیر کرائی، امریکی صدر کا پہلا خطاب خاصا اہم تصور کیا جا رہا تھا ،اپنے پہلے ہی خطاب میں ٹرمپ پاکستان کی تعریف میں رطب اللسان دکھائی دئیے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ریاست گجرات کے شہر احمد آباد میں عوام کے جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارت اور امریکا دہشت گردوں اور ان کے نظریات کے خلاف جنگ میں متحد ہیں، اسی لیے میری حکومت دہشت گرد گروہوں کے خلاف کارروائی کے لئے پاکستان کے ساتھ مثبت انداز میں کام کر رہی ہے۔ٹرمپ نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ ہمارے تعلقات بہت اچھے ہیں جن میں ترقی ہو رہی ہے، ان کوششوں کی بدولت پاکستان کے ساتھ پیش رفت کے اشارے نظر آنے شروع ہوگئے ہیں، ہم جنوبی ایشیا میں کشیدگی کم ہونے، استحکام میں اضافے اور مستقبل میں ہم آہنگی کے لئے پر امید ہیں۔