کے الیکٹرک کا وزیراعلی سندھ کے احکامات تسلیم کرنے سے انکار، بلوں میں چھوٹ نہیں دے سکتے، ترجمان

کراچی(ویب ڈیسک) وزیراعلی سندھ کی جانب سے عوام کو بجلی اور گیس کے بلوں میں رعایت دینے کی ہدایات نظر انداز کر دی گئی ہیں۔ کراچی میں بجلی سپلائی کے ادارے کے الیکٹرک کی جانب سے صارفین سے بل وصول کرنے میں چھوٹ کی اپیل رد کر دی گئی ہے۔

کے الیکٹرک نے صارفین کے بل کی 10 ماہ کی اقساط کرنے سے بھی انکار کردیا ہے۔

ترجمان کےالیکٹرک نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ صوبائی اور وفاقی حکام نے 240 ارب روپے کے-الیکٹرک کو ادا کرنے ہیں، بجلی کی فراہمی کے لیے ایندھن کی خریداری ضروری ہے، ان چیلنجز کے باوجود صارفین کو متواتر بجلی فراہم کر رہے ہیں۔

تاہم ترجمان کے الیکٹرک کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق 4 ہزار روپے سے کم کے بلوں کی ادائیگی کی تاریخ بڑھادی گئی ہے۔ کے الیکٹرک کے مطابق صارفین 10 اپریل تک اپنے بل جمع کرواسکتے ہیں، چیلنجز کے باوجود شہریوں کو متواتر بجلی فراہم کر رہے ہیں۔

واضح رہے کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ گرزشتہ روز نے سندھ میں بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کو ہدایات دی ہیں کہ جن شہریوں کے بل پانچ ہزار روپے سے کم ہیں ان سے رواں ماہ بل وصول نہ کیئے جائیں۔۔

وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ پانچ ہزار روپے کا بل اگلے دس ماہ میں قسطوں میں وصول کیا جائے۔۔ ہدایت کے مطابق جن صارفین کے بل دو ہزار تک ہی ان سے بل وصول نہ کیا جائے۔۔ یہ بل آئندہ دس ماہ میں آسان اقساط میں وصول کیا جائے۔۔ آئندہ دو ماہ تک بجلی اور گیس کے کنکشن منقطع نہ کیے جائیں۔