ویب ڈیسک ۔ لاہور پولیس نے شہر کے پوش علاقے سے معروف فیشن ڈیزائنر ماریہ بی کے شوہر خطرناک کرونا وائرس پھیلانے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔ ماریا بی نے وزیراعظم عمران خان سے اپیل ہے کہ کل رات ہمارے گھر پر پولیس نےایسے ریڈ کیا جیسے ہم پورے لاہور کے سب سے بڑے ڈرگ لارڈ ہوں۔

تفصیلات کے مطابق پولیس نے گزشتہ رات لاہور کے پوش علاقے میں ایک گھر پر چھاپہ مار کر معروف فیشن ڈیزائنر ماریہ بی کے شوہر کو گرفتار کرلیا، ملزم پر الزام ہے کہ ان کے گھر کام کرنے والے باورچی کا کرونا وائرس پازیٹو آیا جس پر انہوں نے باورچی کو ہسپتال لے جانے کی بجائے بس کا کرایہ دے کر اس کے گاوٴں بھجوا دیا۔ لاہور پولیس کا موقف یہ ہے کہ ماریہ بی کے ایک ملازم میں کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی لیکن ماریہ کے خاوند نے بجائے اسے رپورٹ کرنے کے ملازم کو ایک بس میں بٹھا کر کر اسے اس کے گاؤں بھجوادیا جس کی وجہ سے بہت سے دیگر لوگوں کو کرونا وائرس لگنے کا خدشہ ہوگیا ہے۔

ماریہ بی نے ایک ویڈیو پیغام میں ایک ویڈیو پیغام میں اپنے شوہر کی گرفتاری کی روداد سناتے ہوئے وزیراعظم پاکستان عمران خان سے اپنے اوپر ہوئے ظلم کا نوٹس لینے کی اپیل کی ہے۔ دوسری جانب پنجاب حکومت کے ترجمان ڈاکٹر شہباز گل نے ٹویٹر پر ماریہ بی کے ساتھ ہونے والی زیادتی پر افسوس کا اظہار کیا اور ساتھ ہی کہا کہ ان کے شوہر کے غیر ذمہ دارانہ رویے پر بھی تنقید کی۔