غریبوں کی مالی مدد کے نام پر فوٹو سیشن کی تصاویر سوشل میڈیا پر وائرل

سوشل میڈیا پر آج کل کچھ تصاویر وائرل ہورہی ہیں جن میں پیپلزپارٹی کے جیالے اور کچھ دیگر جماعتوں کے کارکن کرونا وائرس سے بچنے اور غریبوں کی مالی مدد کیلئے مفت “لائف بوائے” صابن تقسیم کررہے ہیں اور جن غریبوں کو وہ صابن دے رہے ہیں انکے ساتھ فوٹو سیشن اور سیلفیاں بھی بناکر سوشل میڈیا پر پوسٹ کروارہے ہیں تاکہ وہ اپنے عزیزوں اور دوستوں کو بتاسکیں کہ انہوں نے کتنا بڑا کام کیا ہے ۔ صابن تقسیم کرنیوالوں میں زیادہ تر تعداد پیپلزپارٹی کے جیالوں، مقامی کونسلرز کی ہے

سوشل میڈیا صارفین ان تصاویر اور سیلفیوں پر کڑی تنقید کررہے ہیں۔ انکا کہنا ہے کہ اگر نیکی کرنی ہی ہے تو خاموشی سے کرو، غریبوں کے ساتھ اس طرح تصاویر بنواکر ان کی غربت کا مذاق اڑانے کی کیا ضرورت تھی؟ انکا مزید کہنا ہے کہ کہیں 5 کلو آٹے کا تھیلا دیکر اپنی تشہیر کی جارہی ہے تو کہیں 25 روپے والا صابن دیکر۔

جس نیک عمل میں ریاکاری ہو ، وہ ثواب کےبجائے ذلالت کا موجب ہوتا ہے۔ یہ لوگ نہ صرف کسی کی غربت کا مذاق اڑارہے ہیں بلکہ ایسی نیچ حرکتیں اپنے آپکو بھی چھوٹا ثابت کررہے ہیں۔

کچھ سوشل میڈیا صارفین نے یہ دعویٰ کیا کہ جو صابن غرباء کو دیا جارہا ہے، وہ دراصل ایکسپائر ہوچکا ہے۔

ایک شخص نے اپنے علاقے کے لیڈر کی تصاویر شئیر کیں اور کہا کہ مسلم لیگ ن کے جانباز شفیق ملک صاحب کی طرف سے غرباء میں ماسک,صابن سنیٹائزر تقسیم کرنے پر ہم شفیق ملک کا شکریہ ادا کرتے ہیں اللہ آپکو اجر دے آمین