مقامی کمپنیوں کے تیار کردہ وینٹیلیٹرز کی آزمائش آج سے ہوگی

کرونا وائرس کے خلاف جنگ، مقامی کمپنیوں کے تیار کردہ وینٹیلیٹر کی آج سے آزمائش ہوگی ، طے شدہ میعار پر پورا اترنے والے وینٹیلیٹر کی تیاری شروع کی جائے گی تاکہ وبا کا موثر طریقے سے مقابلہ ہو سکے

تفصیلات کے مطابق ملک کی چار کمپنیوں نے اپنے ماڈلز تیار کرلیے ہیں جن کی آزمائش پیر سے اسلام آباد کے میڈیکل سینٹر میں کورونا کے مریضوں پر کی جائے گی، مقامی سطح پرتیار کردہ وینٹی لیٹرز کے نتائج کی بنیاد پر منظور شدہ وینٹی لیٹرز کی مقامی سطح پر بڑے پیمانے پر تیاری شروع کردی جائیگی۔

طبی ماہرین پر مشتمل ایک اعلیٰ سطح کی کمیٹی جس میں ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کے ماہرین بھی شامل ہیں آزمائش کی نگرانی کریں گے۔ جس کے بعد حکومت کی تشکیل کردہ ایک کمیٹی جس میں، پاکستان انجینئرنگ کونسل اور نیشنل ڈزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی بھی شامل ہے طے شدہ معیار کے مطابق، ٹیسٹ کرنے کے بعد ان کی منظوری دے گی جس کے بعد ان کی تیاری کا کام شروع ہو گا۔

مقامی سطح پر وینٹی لیٹر بنانے والی ٹیکنالوجی کمپنیوں میں صوفیا کی سرزمین سیہون سے تعلق رکھنے والے ٹیکنالوجی ایکسپرٹ علی مرتضی سولنگی کی ٹیم بھی شامل ہے جس نے مقامی سطح پر اسمارٹ اور پورٹیبل وینٹی لیٹر تیار کیا ہے جسے ایک مرکزی مانیٹرنگ سسٹم سے منسلک کرکے بیک وقت ہزاروں مریضوں کی وینٹی لیٹر پر نگرانی کی جاسکتی ہے۔

علی مرتضی سولنگی کے مطابق ان کا تیار کردہ وینٹی لیٹر مریض کو پہنچنے والی آکسیجن، دل کی دھڑکن فی منٹ، کاربن ڈائی آکسائڈ کا اخراج، جسم کا درجہ حرارت، بلڈ پریشر کی معلومات ویب پر فراہم کر دے گاپاکستان میں کورونا کے خلاف جنگ جیتنے کے بعد یہ پراجیکٹ مکمل طور پر ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے سپرد کردیا جائے۔