شیعب اختر بھارتی ٹیم کی کوچنگ کے خواہشمند

اسلام آباد(ویب ڈیسک) سپیڈ سٹار پاکستانی فاسٹ بائولر شعیب اختر نے کہا کہ اگر ان کو بھارتی ٹیم کے بولنگ کوچ بننے کا موقع ملا تو وہ ضرور کریں گے ان کا کہنا تھا کہ ہمیشہ سے جارحانہ انداز اپنانے والے بولرز تیار کرنا ان کی خواہش رہی ہے ایسے بولرز ہوں جو کریز پر بات کر سکیں مگر فی الحال ان کو بھارتی بولرز میں یہ چیز نظر نہیں آتی۔

ماضی میں کرکٹ کے واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ1998 میں سچن ٹنڈولکر سے پہلی بار سامنا ہوا پتہ چلا وہاں لوگ ان کو کرکٹ گُرو مانتے ہیں میں جتنی تیز گیند کراسکتا تھا میں نے کرائی جس پر مقامی شائقین نے بھرپور حوصلہ افزائی کی۔انہوں نے بتایا کہ سچن ٹنڈولکر ان کے اچھے دوست ہیں اور بھارت میں ان کے چاہنے والوں کی بڑی تعداد موجود ہے۔

شعیب اختر کا مزید کہنا تھاکہ جو سیکھا وہ دوسروں تک پہنچانا ہے کولکتہ نائیٹ رائیڈر میں کھیل چکا ہوں اسی لیے اس ٹیم کی کوچنگ کرنا چاہتا ہوں۔

یاد رہے کہ ماضی میں وریندر سہواگ شعیب اختر سے متعلق کہہ چکے ہیں کہ ان کو بھارت سے پیسہ کمانا ہوتا ہے اسی لیے وہ بھارتی کرکٹ کی تعریفیں کرتے ہیں۔

سوشل میڈیا صارفین اکثر شعیب اختر پر الزام لگاتے ہیں کہ شعیب اختر بھارتی انتہاپسندی، مودی کے کشمیریوں پر مظالم، بھارت میں اقلیتوں پرمظالم پر بات نہیں کرتے لیکن بھارتیوں کی تعریفوں میں سب سے آگے ہوتے ہیں۔ جس کیو جہ سوشل میڈیا صارفین یہ بتاتے ہیں کہ شعیب اختر کے یوٹیوب چینل کے سبسکرائبر زیادہ تر بھارتی ہیں وہ ایسی بات کرکے بھارتیوں کو ناراض نہیں کرنا چاہتے اور سبسکرائبرز کھونا نہیں چاہتے۔

کشمیر میں لاک ڈاؤن، آرٹیکل 370 اے پر بھی شعیب اختر نے بات کرنے سے گریز کیا تھا جس پر شعیب اختر پر شدید تنقید ہوئی تھی۔