بلوچستان میں دہشتگردی، پاک فوج کے 6اہلکار شہید

ویب ڈیسک ۔ پاکستان شورش زدہ صوبے بلوچستان میں دہشتگردی کے دو مختلف واقعات میں پاک فوج کے 6جوانوں سمیت 7افراد شہید ہو گئے۔

آئی ایس پی آر نے شہادتوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ بلوچستان کے  ضلع بولان کی تحصیل مچھ کے علاقہ پیر غائب میں گزشتہ شب ایف سی کی گاڑی پر دیسی ساختہ بم سے حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں 5 اہلکاروں سمیت 6 افراد شہید ہو گئے۔

جبکہ دوسرے واقعہ میں پاک فوج کی گاڑی رات معمول کے گشت کے بعد اپنے بیس کیمپ واپس جارہی تھی کہ راستے میں نصب ریموٹ کنٹرول بم سے اسے نشانہ بنایا گیا۔ ایف سی کے شہداء میں جونیئر کمیشنڈ افسر اور سویلین ڈرائیور بھی شامل ہے۔

شہداء کے نام نائب صوبیدار احسان اللہ،نائیک زبیر،نائیک اعجاز احمد، نائیک مولا بخش،نائیک نور محمد اور ڈرائیور عبدالجبار ہیں۔ ادھر پاک ایران بارڈر کے قریب مند کیچ کے علاقے میں دہشت گردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلہ میں سپاہی امداد علی شہید ہوگیا۔

یاد رہے کہ چند روز قبل بھی بلوچستان میں پاک فوج پر ایک حملہ کیا گیا تھا جس میں 6 جوان شہید ہو گئے تھے۔ بلوچستان میں پاک فوج پر بڑھتے ہوئے حملوں میں بھارتی ہاتھ خارج از امکان نہیں۔ بھارتی فوج کے ایک ریٹائرڈ میجر گوروو نے بھارتی ٹی وی پر ایک لائیو پروگرام میں دعویٰ کیا تھا کہ بلوچستان میں پاک فوج پر بڑے ہونے والے ہیں اور وہ تمام بلوچ باغیوں سے رابطے میں ہیں۔ میجر گوروو کے دعوے کے چندروز بعد ہی پاک فوج پر حملے شروع ہو گئے ہیں۔