نواز شریف کیخلاف فیصلے کو بیلنس کرنے کے لئے مجھے نااہل کروایا گیا، جہانگیر ترین

تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر خان ترین نے کہا کہ مجھے نا اہل اس لئے کروایا گیا تا کہ نواز شریف کے فیصلے کو بیلنس کیا جا سکے، میری نااہلی بنتی نہیں تھی، میرے اثاثے ڈیکلئیرڈ تھے، تمام منی ٹریل موجود تھی اور نااہل صرف اسلئے کیا گیا کہ اثاثے بچوں کے نام پر تھے۔ یہ بہت تکلیف دہ بات ہے

سماء نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے ہانگیرترین کا مزید کہنا تھا کہ اگر میں نوازشریف کے خلاف بڑھ چڑھ کر عمران خان کے شانہ بشانہ نہ لڑتا تو میں شاید اب تک نااہل نہ ہوتا۔ میرے خلاف انہوں نے پٹیشن تک نہیں کرنی۔

ندیم ملک نے پوچھا کہ کیا آپ کو کسی نے بتایا کہ آپکو نوازشریف کے فیصلے کو بیلنس کرنے کیلئے نااہل کیا گیا جس پر جہانگیرترین نے کہا کہ اس وقت ہر ایک کی زبان پر یہ بات تھی۔ ڈان کی بہت بڑی ہیڈلائن تھی کہ دی بیلنسنگ ایکٹ۔

جہانگیر ترین کو نا اہل کروانے میں کس نے کردار ادا کیا ؟ اس پر ندیم ملک نے کہا کہ اس میں اس وقت کے چیف جسٹس کا رول ادا کرنا تھا۔ یہ کوئی سودا بازی تو نہیں ہورہی تھی، اگر دونوں کے خلاف کچھ نہیں تھا تو پٹیشن خارج کردینی چاہئے تھی۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published. Required fields are marked *