سنگاپور: ہندو پجاری نے اپنے ہی بھگوانوں کو لوٹ لیا

سنگاپور( ویب ڈیسک )سنگاپور کے قدیم ترین ہندو مندروں میں سے ایک شری مریممان مندر کے چیف پجاری کو “مجرمانہ غداری” کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔ مقامی پولیس نے یہ معلومات میڈیا کے ساتھ شیئر کیں۔ ہفتہ کے روز جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے پولیس میں شکایت درج کرائی ہے کیونکہ پادری کی نگرانی میں رکھے ہوئے بھگوان کی مورتی کےسونے کے زیورات غائب تھے۔ اس معاملے کی تحقیقات جاری ہے ، جبکہ اس معاملے میں پجاری کو عدالت سے ضمانت مل گئی ہے ، لیکن اس کے مستقبل کے بارے میں کوئی فیصلہ نہیں ہوا ۔اس خبر سے یقیناً اسےہندو کیمونٹی کے غیظ و غضب کا سامنا کرنا پڑے گا۔

سنگاپور پولیس کے مطابق ، 36 سالہ پجاری ایک طویل عرصے سے یہاں مقیم تھا۔مقامی میڈیا چینل نیوز ایشیاء کے مطابق ، مندرکی انتظامیہ نے تحائف اور دیگر املاک کا آڈٹ کرایا ، مندر کے انتظام کو آڈٹ کے دوران زیورات کے غائب ہونے کی اطلاع ملی تھی۔مندر انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پوجاور آرتی کے دوران استعمال ہونے والے سونے کے زیورات کو مندرکے تہہ خانہ میں مرکزی پجاری کی نگرانی میں رکھا گیا تھا۔ پادری سے اس بارے میں پوچھ گچھ کی گئی اور اس نے بعد میں چوری شدہ تمام زیورات واپس کردیئے۔ “تاہم ان کے بیان میں پادری کے نام کا ذکر نہیں کیا گیا ۔”