سری لنکا کا اسلام پر وار، ملک اسلامی سکولوں اور نقاب پر پابندی کا فیصلہ

ویب ڈیسک: سری لنکا کی حکومت نے اپنے ملک اسلامی سکولوں پر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے اس کے ساتھ ہی ساتھ سری لنکا میں مسلمان خواتین کے پردہ کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابقسری لنکا کے وزیر برائے عوامی تحفظ سارتھ ویراسکیرا نے برقع پہننے کو شدت پسندی قرار دیتے ہوئے ملک بھر میں نقاب پہننے پر پابندی عائد کرنے کی دستاویز پر دستخط کردیئے ہیں جسے کابینہ سے منظور کرایا جائے گا۔ اسکے علاوہ  قومی تعلیمی پالیسی کی خلاف ورزی کرنے والے ہزار سے زائد اسلامی اسکولوں پر بھی پابندی کا فیصلہ کیا ہے۔ اس بات کی اجازت نہیں دی جاسکتی کہ کوئی بھی اپنی مرضی سے اسکول کھول لے اور جو من کرے پڑھائے۔

یاد رہے کہ ہ 2019 میں ایسٹر کے موقع پر گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر خود کش حملے میں سیکڑوں افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ ایک حملہ آور خاتون نے نقاب لگایا ہوا تھا جس کے بعد ملک بھر میں نقاب پہننے پر پابندی عائد کردی گئی تھی۔ اس سے قبل سری لنکا میں کورونا سے ہلاک ہونے والے مسلمانوں کی تدفین پر بھی پابندی عائد کر دی گئی تھی۔