گیلانی کی درخواست مسترد، اکثریت ہے تو سنجرانی کو آئینی طریقے سے ہٹائیں، اسلام آباد ہائیکورٹ

ویب ڈیسک: اسلام آباد ہائی کورٹ نےچئیرمین سینٹ کے خلاف سینیٹر یوسف رضاگیلانی کی درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی چئیرمین سینٹ صادق سنجرانی کے خلاف درخواست کو ناقابل سماعت قرار دے کر خارج کر دیا۔ چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ نے ریمارکس دیئے کہ اگر گیلانی صاحب کے پاس اکثریت ہے تو وہ چئیرمین سینیٹ کو نہ صرف ہٹا سکتے ہیں بلکہ خود چئیرمین سینیٹ بھی بن سکتے ہیں۔

اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے 12 صفحات پر مشتمل فیصلے میں کہا گیا کہ سیاسی قیادت عدالتوں کو ایسے معاملات میں ملوث کیے بغیر تنازعات کا حل نکالنے کے لیے کوشش کرے۔فیصلے میں یہ بھی لکھا گیا ہے کہ د کہا ہے کہ سینیٹ کے سات ارکان کی جانب سے آئینی طریقہ استعمال کرنے پر پارلیمان کی عزت اور خودمختاری میں اضافہ ہوگا۔

 چیف جسٹس نے اپنے فیصلے میں کہا کہ عدالت توقع رکھتی ہے کہ پارلیمنٹ کی بالا دستی کو یقینی بنایا جائے گا ،توقع ہے کہ پارلیمنٹ کے مسائل پارلیمنٹ کے اندر ہی حل کئے جائیں گے،توقع ہے منتخب نمائندے اور سیاسی قیادت عدالت کو ملوث کیے بغیر تنازعات حل کرنے کی کوشش کریں گے,آرٹیکل 69 کے تحت عدالت اس معاملے میں مداخلت نہیں کرسکتی ۔

تبصرہ کریں

Your email address will not be published.